حکومت حاجیوں کو بھی لوٹنے میں مصروف

…فیاض اللہ خان…

پاکستان میں جہاں مہنگائی کے طوفان نے غریب عوام سے روٹی ،کپڑا اور مکان جیسی بنیادی سہولتوں کے حصول میں مشکلات پیدا کیں ہیں وہیں حج جیسی عظیم سعادت حاصل کرنے کیلئے بھی لوگ مشکلات کا شکار ہیں۔پاکستان بھر سے ایسے غریب افراد تک حج کی خواہش رکھتے ہیں جنہیں روز مرہ کی گزر بسر کیلئے سخت محنت کرنا پڑتی ہے۔ان میں بہت سے ایسے بزرگ بھی ہوتے ہیں جو اپنی ساری عمر ایک ایک پیسہ جوڑ کر حج اخراجات کیلئے رقم جمع کرتے ہیں۔

اس سال حج پالیسی 2010کا اعلان قبل از وقت کیا گیا ۔ کراچی سے حج اخراجات کی مدمیں دو لاکھ چھبیس ہزار جبکہ دوسرے شہروں سے دو لاکھ اڑتیس ہزار روپے کا اعلان کیا گیا اور دعویٰ کیا گیا کہ اس سال حج اخراجات میں کسی قسم کا اضافہ نہیں کیا گیا البتہ حج کرایوں میں معمولی اضافہ کیا گیا ہے جبکہ گزشتہ سال حج اخراجات ایک لاکھ پچیاسی ہزار رکھے گئے تھے اور یوں اس سال حج اخراجات کی مد میں تقریباً اکتالیس ہزار روپے کا اضافہ کردیا گیا ۔

حج پالیسی کے اعلان کے بعد درخواستیں وصول ہونے کا عمل نہایت سست روی کا شکار رہا اور مقررہ تاریخ میں اضافے کے باوجود وزارت مذہبی امور کو سترہ ہزار درخواستیں کم موصول ہوئیں جو اس بات کا ثبوت ہے کہ حکومت کی اس ناقص پالیسی کے باعث ہزاروں لوگ خواہش رکھنے کے باوجو د حج جیسی سعادت سے محروم رہ گئے۔

حج اخراجات میں بے پناہ اضافے پر جب وزارت مذہبی امور حامد سعید کاظمی سے میڈیا اور عوام نے سوال کیاگیا تو ان کا کہنا تھا کہ اعلان کردہ حج اخراجات میں کمی کرنا ناممکن ہے اور یہ کام وفاقی کابینہ کے بس میں ہے ،اگر کابینہ حج اخراجات میں کمی کااعلان کرے اور اس پر سبسڈی دے دے تو حج اخراجات میں کمی ممکن ہے ۔وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کی زیر صدرات کابینہ کے اجلاس میں حج اخراجات میں نو ہزار رو پے کمی کا فیصلہ کیا تاہم دوسرے ہی دن وزارت مذہبی امور نے اس فیصلے کوماننے سے سرے سے ہی انکار کردیا ۔

جب اس ملک کی تاریخ کا سب سے کرپٹ صدر لندن میں قیام کیلئے ہوٹل کے ایک رات کے قیام کیلئے 7000 پاؤنڈ کے حساب سے ملکی خزانے سے ادا کرسکتا ہے اور وفاقی وزیر قانون جب غریب وکلاء کو خریدنے کیلئے جہاز کرائے پر لے کر ملک کے دورے کرسکتے ہیں تو کیا حکومت اس عظیم سعادت کے لئے قلیل رقم سبسڈی نہیں دے سکتی کیونکہ نہ تو اس پر آئی ایم ایفنے کوئی پابندی لگائی ہے اور نہ ہی ورلڈ بینک نے۔موجودہ حکومت نے جہاں کرپشن کی انتہا کردی ہے وہیں حج اخراجات میں کی مد میں آنے والی آمدنی سے اپنی جیبیں بھرنے میں مصروف ہیں۔

اگر حکومت نے سنجیدگی سے عوام کے مسائل کے حل کیلئے کام نہ کیا اورعوام کو ریلیف نہ دیا توشاید اس دنیا میں تو نا اہل حکام یہاں تو بچ جائیں مگر اللہ کے ہاں ضرور جواب دیں ہیں۔

Advertisements

حکومت حاجیوں کو بھی لوٹنے میں مصروف پر 2 جوابات

  1. شازل نے کہا:

    حج کے کرایوں میں اضافے سے ان لوگوں کو زیادہ تکلیف ہوتی ہے جو پیسہ پیسہ جوڑ کر حج پر جانے کی تمنا رکھتے ہیں

  2. naveed jadoon نے کہا:

    فیاض اللہ خان ، آپ نے اچھا موضو ع چنا ہے ۔ایسے ہی موجودہحالات پر تبصرے کرتے رہیں۔تاکہ اس ناامیدی کی دور میں آپ کی تحریروں سے قوم کو شعور و آگاہی مل سکے ۔شکریہ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: