جمشید دستی کو کامیاب کرانیوالوں کی نذر،فیض کی لازوال نظم

کتے

یہ گلیوں کے آوارہ بے کار کتے
کہ بخشا گیا جن کو ذوقِ گدائی
زمانے کی پھٹکار سرمایہ اُن کا
جہاں بھر کی دھتکار کمائی ان کی

نہ آرام شب کو ، نہ راحت سویرے
غلاظت میں گھر ، نالیوں میں  بسیرے
جو بگڑیں تو ایک دوسرے سے لڑا دو
ذرا  ایک  روٹی  کا   ٹکڑا  دکھا   دو

ہر   ایک    کی  ٹھوکر  کھانے  والے
یہ فاقوں سے اکتا کر مر جانے والے

یہ مظلوم مخلوق گر سر اٹھائے
تو انسان سب سرکشی بھول جائے
یہ چاہیں تو دنیا کو  اپنا بنا لیں
یہ آقاؤں کی   ہڈیاں  تک  چبا لیں

کوئی ان کو احساسِ ذلت دلا دے
کوئی ان کی سوئی ہوئی دُم ہلا دے

فیض احمد فیض

Advertisements

جمشید دستی کو کامیاب کرانیوالوں کی نذر،فیض کی لازوال نظم پر 6 جوابات

  1. Yasir Imran نے کہا:

    لیکن ان گھٹیا سیاستدانوں پر کوئی اثر نہیں ہونے والا۔

  2. فيض احمد فيض ايسی نظميں بھی لکھ گئے يہ ميرے عِلم ميں نہيں تھا

  3. محمد احمد نے کہا:

    واقعی میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ جس شخص نے سرِ عام دھوکہ بازی کا مظاہرہ کیا ہو عوام انہیں پھر سے منتخب کر لے گی۔ ڈوب مرنے کا مقام ہے۔

    کوئی ان کو احساسِ ذلت دلا دے
    کوئی ان کی سوئی ہوئی دُم ہلا دے

    خوب!

  4. Yasir Imran نے کہا:

    واقعی میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ جس شخص نے سرِ عام دھوکہ بازی کا مظاہرہ کیا ہو عوام انہیں پھر سے منتخب کر لے گی۔ ڈوب مرنے کا مقام ہے۔
    ——————
    یہ پاکستانیوں کا ہی کمال ہے جناب

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: